Terrorism News/Incidents in Pakistan


#1281

O yeah! you are damn right!
America never gets into wars, in-fact people always drag them into it! America is the most effing peaceful country in the whole world.
And yet America has Attacked 156 countries out of the total 194 countries of the world.
I sincerely think you should kill your self.
regards

Ahmsun

As for the attack on pearl harbour click on this spoiler:

In July 1941, the United States, in support of China, issued an oil embargo on Japan. This embargo threatened to completely destroy Japans military campaign and their economy.

So, it can be concluded:

[quote=", post:, topic:"]

اگر امریکہ ہر جکہ بنڈ پنگہ نہ لے تو اسکو کوئ کچھ نہیں کہے گا۔[/quote]

Readers discretion is advised, PG18.


#1282

the great decline in tourism of Pakistan, its gaining its worth again


#1283

[quote=“Ahmsun, post:1281, topic:8084”]

O yeah! you are damn right!

America never gets into wars, in-fact people always drag them into it! America is the most effing peaceful country in the whole world.

And yet America has Attacked 156 countries out of the total 194 countries of the world.

I sincerely think you should kill your self.

regards

Ahmsun

[/quote]

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

ماضی بعيد ميں مختلف اقوام کی دنيا ميں حيثيت اور اثر رسوخ کا دارومدار جنگوں اور معرکوں کے نتيجے ميں پيدا ہونے والے حالات اور نتائج کے تناظر ميں ہوتا تھا جبکہ جديد دور ميں کسی بھی قوم کی برتری کا انحصار سائنس اور ٹيکنالوجی کے ميدان ميں کاميابی، کاروبار اور معاش کے مواقعوں اور نت نۓ امکانات کی دستيابی پر مرکوز ہوتا ہے۔ اس تناظر ميں امريکہ يا کسی اور ملک کے ليے "سپر پاور" کی اصطلاح اس بنيادی اصول کی مرہون منت ہوتی ہے کہ عام انسانوں کے معيار زندگی ميں بہتری لانے کے لیے کتنے تخليقی ذرائع اور مواقعے مہيا کيے گۓ ہيں۔

آج کے جديد دور ميں جنگيں اور فسادات اجتماعی انسانی ترقی اور کاميابی کی راہ ميں رکاوٹ ہيں۔

جو لوگ امريکہ پر الزامات کی بوچھاڑ کر کے اس بات پر بضد ہيں کہ امريکہ ہی دنيا ميں تمام جنگوں کا ذمہ دار ہے، ان کی غلط منطق کے مطابق دنيا بھر ميں تشدد ہمارے مفاد ميں ہے۔ اگر يہ دعوی درست ہے تو پھر بيک وقت يہ دعوی نہيں کيا جا سکتا کہ ہم ٹوٹ پھوٹ کا شکار بھی ہيں اور اپنے تسلط کو بڑھانے اور اپنے مفادات کو تقويت دينے کے ليے جنگوں کو فروغ بھی دے چلے جا رہے ہيں۔

آپ دنيا ميں امريکہ کے مثبت کردار کو يکسر فراموش کر رہے ہيں جس ميں دنيا کے بے شمار ممالک کے ليے مستقل بنيادوں پر امدادی پيکج اور تعميری منصوبوں ميں مدد بھی شامل ہے۔

تکنيکی مہارت، طب، تعليم اور زراعت کے ميدانوں ميں معجزانہ ترقی کے علاوہ ہر شعبہ زندگی ميں امريکی ترقی سے دنيا بھر کے لاکھوں لوگوں کی زندگيوں ميں بہتری کا عمل جاری رہتا ہے۔

يہ امر بھی غور طلب ہے کہ جن امريکی شہريوں کو بحثيت مجموعی ہدف تنقيد بنايا جاتا ہے، يہ وہی ٹيکس دہنگان ہيں جنھوں نے امريکہ کو دنيا بھر ميں انسانی بنيادوں پر مدد فراہم کرنے والے ممالک ميں سرفہرست لانے ميں کليدی کردار ادا کيا ہے۔

کيا آپ واقعی يہ سمجھتے ہيں کہ امريکی عوام جو دنيا بھر کے عوام کی بہتری کے ليے سالانہ کروڑوں روپے خرچ کرتی ہے وہ اپنی حکومت کو محنت سے کمائ ہوئ دولت اس بنياد پر خرچ کرنے کی اجازت دے گي کہ اس امداد کے ذريعے دنيا بھر ميں جنگوں اور فسادات کا سلسلہ دانستہ جاری رکھا جاۓ؟

تنقيد براۓ تنقيد

اپنی جگہ ليکن کيا اس دعوے

ميں منطق اور فہم کا کوئ پہلو بھی ہے؟

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

http://www.facebook.com/USDOTUrdu


#1284

یہ دعوہ نہِیں ہے حقیقت ہے۔
بہت شکریہ اس امداد کا جس میں ایک ہاتھ سے روٹی اور دوسرے سے بم گرائیں جا رے ہیں،
عوام خوشی سے نڈھال ہے، ساری عوام امداد کی بتیاں بنا کرپیچھے لے کر خوشی سے نعرے مار رہی ہے۔

Following are the only major attacks(Do you include this also in positive effects?):

(1)lots of Indian Nations (2) Mexico (1836-1846; 1913; 1914-1918; 1923), (3) Nicaragua (1856-1857; 1894; 1896; 1898; 1899; 1907; 1910; 1912-1933; 1981-1990), (4) American forces deployed against Americans (1861-1865, Civil War; 1892; 1894; 1898; 1899-1901; 1901; 1914; 1915; 1920-1921; 1932; 1943; 1967; 1968; 1970; 1973; 1992; 2001), (5), Argentina (1890), (6), Chile (1891; 1973), (7) Haiti (1891; 1914-1934; 1994; 2004-2005), (8) Hawaii (1893-), (9) China (1895-1895; 1898-1900; 1911-1941; 1922-1927; 1927-1934; 1948-1949; 1951-1953; 1958), (10) Korea (1894-1896; 1904-1905; 1951-1953), (11) Panama (1895; 1901-1914; 1908; 1912; 1918-1920; 1925; 1958; 1964; 1989-), (12) Philippines (1898-1910; 1948-1954; 1989; 2002-), (13) Cuba (1898-1902; 1906-1909; 1912; 1917-1933; 1961; 1962), (14) Puerto Rico (1898-; 1950; ); (15) Guam (1898-), (16) Samoa (1899-), (17) Honduras (1903; 1907; 1911; 1912; 1919; 1924-1925; 1983-1989), (18) Dominican Republic (1903-1904; 1914; 1916-1924; 1965-1966), (19) Germany (1917-1918; 1941-1945; 1948; 1961), (20) Russia (1918-1922), (21) Yugoslavia (1919; 1946; 1992-1994; 1999), (22) Guatemala (1920; 1954; 1966-1967), (23) Turkey (1922), (24) El Salvador (1932; 1981-1992), (25) Italy (1941-1945); (26) Morocco (1941-1945), (27) France (1941-1945), (28) Algeria (1941-1945), (29) Tunisia (1941-1945), (30) Libya (1941-1945; 1981; 1986; 1989; 2011), (31) Egypt (1941-1945; 1956; 1967; 1973; 2013), (32) India (1941-1945), (33) Burma (1941-1945), (34) Micronesia (1941-1945), (35) Papua New Guinea (1941-1945), (36) Vanuatu (1941-1945), (37) Austria (1941-1945), (38) Hungary (1941-1945), (39) Japan (1941-1945), (40) Iran (1946; 1953; 1980; 1984; 1987-1988; ), (41) Uruguay (1947), (42) Greece (1947-1949), (43) Vietnam (1954; 1960-1975), (44) Lebanon (1958; 1982-1984), (45) Iraq (1958; 1963; 1990-1991; 1990-2003; 1998; 2003-2011), (46) Laos (1962-), (47) Indonesia (1965), (48) Cambodia (1969-1975; 1975), (49) Oman (1970), (50) Laos (1971-1973), (51) Angola (1976-1992), (52) Grenada (1983-1984), (53) Bolivia (1986; ), (54) Virgin Islands (1989), (55) Liberia (1990; 1997; 2003), (56) Saudi Arabia (1990-1991), (57) Kuwait (1991), (58) Somalia (1992-1994; 2006), (59) Bosnia (1993-), (60) Zaire (Congo) (1996-1997), (61) Albania (1997), (62) Sudan (1998), (63) Afghanistan (1998; 2001-), (64) Yemen (2000; 2002-), (65) Macedonia (2001), (66) Colombia (2002-), (67) Pakistan (2005-), (68) Syria (2008; 2011-), (69) Uganda (2011), (70) Mali (2013), (71) Niger (2013).

[quote=", post:, topic:"]

کيا آپ واقعی يہ سمجھتے ہيں کہ امريکی عوام جو دنيا بھر کے عوام کی بہتری کے ليے سالانہ کروڑوں روپے خرچ کرتی ہے وہ اپنی حکومت کو محنت سے کمائ ہوئ دولت اس بنياد پر خرچ کرنے کی اجازت دے گي کہ اس امداد کے ذريعے دنيا بھر ميں جنگوں اور فسادات کا سلسلہ دانستہ جاری رکھا جاۓ؟

[/quote]

ہائے ماں صدقے جائے! کتنے بھولے احمق ہو
کیا امریکہ عوام سے پوچھتی ہے کہ کدھر بڑے دن ہو گئے فارغ بیٹھے ہیں اب کدھر حملہ کریں۔
میاں انکی کانگرس یہ فیصلہ کرتی ہے اور کبھی بھی عوام سے نہیں پوچھتی۔
صرف ایک مثال:
9-11
کے بعد تو دنیا امن کا گہوارہ بن گئ ہے

کیااسامہ بن لادن سی آی اے کا کارندہ نہیں تھا؟
خود حملہ کروا کے تو دوسروں کو مصیبت ڈالی ہوئ ہے۔

اور فرض کیا وہ حملہ امریکہ نے نہیں کرویا تھا تو جو حملہ آور تھے وہ تو سب سعوی تھے افغانستان اپنی پھوپھو کے ولیمے پر گئے تھے۔
چن ماہی میری بات مان اور تھوڑا سا تارِیخ کو پڑھ کے دیکھ لو انشاءاللہ افاقہ ہوگا


Conclusion: Stop lying and again,
You should kill yourself.


#1285

And just one mistake by me:
It was 156 bases in the world, i mistakenly quoted that number.
even still there are near 100 countries which USA has attacked.
امریکہ نے دنیا کے امن کا ٹھیکہ لیا ہوا ہے؟

جو جگہ جگہ ٹھیلا لگا کر بیٹھا ہوا ہے۔
اور جتنا مرضی تم انٹرنیٹ پر امریکہ کی ٹی سی کر لوتمہیں ویزا نہیں ملنا اسکے لئے سفارت خانہ میں جا کے اپنا کیس جمع کرواوٗ ادھر عوام کو بے وقوف مت بناوٗ


#1286

Current score:

Ahmsun: 1

USStateDepartment, aap ki bhabi: 1


#1287

[quote=“Ahmsun, post:1285, topic:8084”]

اور جتنا مرضی تم انٹرنیٹ پر امریکہ کی ٹی سی کر لوتمہیں ویزا نہیں ملنا اسکے لئے سفارت خانہ میں جا کے اپنا کیس جمع کرواوٗ ادھر عوام کو بے وقوف مت بناوٗ

[/quote]

5727282498_9b1a140866_m.jpg

ویزا نہ سہی


#1288

[quote=“Ahmsun, post:1284, topic:8084”]

اور فرض کیا وہ حملہ امریکہ نے نہیں کرویا تھا تو جو حملہ آور تھے وہ تو سب سعوی تھے افغانستان اپنی پھوپھو کے ولیمے پر گئے تھے۔

[/quote]

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

يہ درست ہے کہ 911 کے واقعات ميں براہراست ملوث افراد افغان شہری نہيں تھے۔ ليکن يہ بھی ايک ناقابل ترديد حقيقت ہے کہ جن افراد نے دہشت گردی کے اس واقعے ميں حصہ ليا تھا ان کی تربيت افغانستان ميں موجود القائدہ کے ٹرينيگ کيمپس ميں کی گئ تھی۔ افغانستان کے خلاف فوجی کاروائ کا فيصلہ اسی وقت کيا گيا تھا جب اس وقت کی طالبان حکومت نے ان دہشت گردوں کے خلاف کاروائ کرنے سے انکار کر ديا تھا۔

ماضی ميں جھانکتے ہوۓ شايد يہ بحث کی جا سکتی ہے کہ 90 کی دہائ ميں جب اسامہ بن لادن افغانستان ميں القائدہ کو منظم کر رہا تو آيا امريکی حکومت نے اسامہ بن لادن کو گرفتار کرنے کے ليے ہر ممکن کوشش کی يا نہيں۔ ليکن يہ کہنا حقيقت سے انکار ہو گا کہ دہشت گردی کے وہ خطرات جو آخر کار ستمبر 11 2001 کو حقيقت کا روپ دھار گۓ، ان کو روکنے کے ليے سرے سے کوئ کوشش ہی نہيں کی گئ۔

پاکستان ميں اسامہ بن لادن کی ہلاکت سے قبل امريکہ قريب 15 برس تک اسامہ بن لادن تک رسائ کی کوشش کرتا رہا۔

سال 1996 ميں سی آئ آۓ نے باقاعدہ ايک يونٹ "بن لادن ايشو اسٹيشن" کے نام سے تشکيل ديا جس کا مقصد ہی اسامہ بن لادن کے محل ووقوع کے بارے ميں کھوج لگانا تھا۔

نو گيارہ کے حوالے سے جو کميشن رپورٹ تسکيل دی گئ تھی اس ميں ان تمام اقدامات اور کاوشوں کا تفصيلی ذکر موجود ہے جو اسامہ بن لادن کے حوالے سے کی گئيں۔ يہ اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ اسامہ بن لادن کو روکنے کے ليے ہر ممکن امکان پر کام کيا جا رہا تھا۔

http://govinfo.library.unt.edu/911/report/911Report_Ch4.htm

اگست 20 1998 کو افغانستان ميں القا‏ئدہ کے اڈوں پر امريکی ميزائل بھی داغے گۓ۔ يہ حملہ کينيا اور تنزانيہ ميں امريکی سفارت خانوں پر حملوں کے بعد کيا گيا جن ميں 12 امريکیوں سميت 224 شہری ہلاک اور 5000 سے زائد زخمی ہوۓ۔ اگرچہ اسامہ بن لادن اس حملے ميں بچ نکلا ليکن اس سے اسامہ بن لادن کی جانب سے شروع کی گئ دہشت گردی کی لہر کو روکنے کے ليے امريکی مصمم ارادوں کی توثيق ہو جاتی ہے۔

اسامہ بن لادن کے حوالے سے يہ بھی واضح کر دوں کہ امريکی حکومت کی جانب سے جون 1999 ميں 25 ملين ڈالرز کا انعام مقرر کيا گيا تھا۔ يہ بات 911 کے واقعات سے 2 سال پہلے کی ہے۔

http://www.fbi.gov/wanted/topten/fugitives/laden.htm

اکتوبر 1999 ميں اقوام متحدہ کی جنب سے منظور کردہ قرداد نمبر 1267 ميں يہ واضح درج ہے کہ طالبان کی جانب سے اسامہ بن لادن کی پشت پناہی کی جا رہی ہے۔ اس کے علاوہ طالبان کی حکومت سے اسامہ بن لادن کو حکام کے حوالے

رنے کا مطالبہ بھی اس قرارداد کا حصہ ہے۔

http://www.un.org/Docs/sc/committees/1267/1267ResEng.htm

امريکی حکومت خطرناک دہشت گردوں کو کيفر کردار تک پہنچانے کے ليے مدد کی ترغيب ديتی ہے۔ مثال کے طور پر "ريوارڈ فار جسٹس" پروگرام کے ذريعے صدام حسين کے دونوں بيٹوں کے محل وقوع کی معلومات دينے والے کو انعام دياگيا تھا۔ ليکن يہ بھی ياد رہے کہ ہمارا مقصد محض افراد کی گرفتاری تک محدود نہيں ہے۔ افغانستان ميں ہماری فوجی کاروائ کا مقصد القائدہ تنظيم کا مکمل خاتمہ اور اس امر کو يقينی بنانا ہے کہ افغانستان کی سرزمين کو خطے اور دنيا کے خلاف دہشت گردی کے ليے استعمال نا کيا جا سکے۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

http://www.facebook.com/USDOTUrdu


#1289

And who trained those people in afghanistan it was your سگی ماسی CIA!
You know you are an A$$ H*l3. Lying spreading this bullshit history faked by your people,

Write down this whole history which you are trying to teach us and along with the UASS-AID

and shove it up your A$$.

Once again GO KILL YOURSELF!


#1290

اتنا تو کتا بھی وفادار نہیں ہوتا
Admins please change the name of the forums to UsaidWired2PakistanForums, so that i can die in peace!


#1291

Bhabhi: 2

Ahmsum: 2


#1292

[quote=“Ahmsun, post:1285, topic:8084”]

اور جتنا مرضی تم انٹرنیٹ پر امریکہ کی ٹی سی کر لوتمہیں ویزا نہیں ملنا اسکے لئے سفارت خانہ میں جا کے اپنا کیس جمع کرواوٗ ادھر عوام کو بے وقوف مت بناوٗ

[/quote]

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

اس فورم پر اپنے خلاف ہونے والی تنقيد سے مجھے کوئ حيرت نہيں ہوئ۔ يہ درست ہے کہ اعداد وشمار اور حقائق کی روشنی ميں تعميری اور مثبت بحث کے مقابلے ميں ذاتی حملے آسان نعم ا لبدل ہے کيونکہ کچھ افراد کے نزديک بحث کرنے کا يہی طريقہ ہوتا ہے۔

ميں آپ کی آزاد راۓ کے اظہار کے حق کا احترام کرتا ہوں۔ تاہم کچھ باتوں کی وضاحت کر دوں

ميں ايک امريکی مسلمان ہوں۔ ميں نے اپنی ہر پوسٹ کے آغاز ميں ہميشہ يہ واضح کيا ہے کہ ميرا تعلق يو – ايس – اسٹيٹ ڈيپارٹمنٹ سے ہے۔

يہ بات غور طلب ہے کہ ميں امريکہ ميں کام کرنے والا واحد مسلمان نہيں ہوں۔ يہاں پر لاکھوں کی تعداد ميں مسلمان ہر شعبہ زندگی ميں موجود ہيں۔

اس وقت امريکی کانگريس، اسٹيٹ ڈيپارٹمنٹ، امريکی فوج، نيوی، وائٹ ہاؤس اور فيصلہ سازی کے حوالے سے تمام فورمز پر مسلمان موجود ہيں۔ ليکن بحثيت مسلمان ان کی موجودگی نہ ہی انھيں کوئ فائدہ ديتی ہے اور نہ ہی ان کے فرائض کی ادائيگی ميں ان کے راستے ميں کسی رکاوٹ کا سبب بنتی ہے۔ اس کی وجہ بالکل واضح ہے۔ امريکہ ميں جو بھی پاليسياں تشکيل پاتی ہيں، ان کی بنياد کسی مذہب کی بنياد پر نہيں ہوتی۔

http://www.youtube.com/watch?v=Pz0_8wKiz1M

ميرا مختلف فورمز پر آپ لوگوں سے براہراست رابطہ افواہوں اور غلط خبروں سے ہٹ کر سرکاری ذرائع سے درست معلومات آپ تک پہنچانے کی ايک مخلصانہ کوشش ہے۔ میرا مقصد قطعی طور پر غير مسلموں کا دفاع کرنا يا مسلمانوں پر اثرانداز ہونا نہيں ہے۔ ميں کسی بھی مذہبی وابستگی سے ہٹ کر صرف مختلف موضوعات پر امريکی حکومت کا موقف اور پوزيشن آپ کے سامنے پيش کر رہا ہوں۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

http://www.facebook.com/USDOTUrdu


#1293

But i totally do not respect your freedom of speech, infact i want people like you be punished for spreading lies and spreading False propaganda.

Do you even have any self respect?????
I guess you are also one of those half-bred muslims who are by name and birth muslim but are born to lick the boot of their masters.
You should kill yourself.


#1294

and playing this muslims card will not bring any dignity to your hideous cause. This is the first time i can see a muslim crusader.
You read off the paper writtren by culprits and type it here to spread your sh*t!
And just for your Information we do not want your "Maukaf" on these issues, these are paksitani issues we will deal with it.
We are not slaves we a living nation, go back from where you came and convince them to believe in your stupid and ignorant lies.

And now you will say that i am being too much of hatred; yes i do hate your kind, infact i hate people who do not have the ability to

understand others questions and take out a part of it and then answer it.

Please this time it is a request: Kill yourself.


#1295

Liars really love the concept of free speech because it is the only thing that 'fits' their nature. In their loving ideal free-for-all country, spreading hatred -> lies -> accusations are the first steps they undertake, which ultimately satisfy their goals of war, death and destruction.

Such 'free-speech' and personal freedom loving countries like the USA, do not feel abashed in the least for invading a country on their personal whim and false accusations, but instead, believe themselves to be the fore-bearers of humanity and civilization. The money and wealth of these self-proclaimed 'free world' countries will always buy them thousands of boot-lickers in different countries to push their self-centered agendas.

Sorry to disappoint you Ahmsun, but if only such slaves started dying due to any arousal of self-respect, the world would have turned into the Heaven already. On the contrary, every one of them will cling to their lives till the very last moment they can extend it to.


#1296

[quote=“Ahmsun, post:1284, topic:8084”]

9-11

کے بعد تو دنیا امن کا گہوارہ بن گئ ہے

[/quote]

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

آپ کے سوال کے جواب کے ليے ميرا پھر سوال ہے۔ جب دہشت گرد دانستہ اور جانتے بوجھتے ہوۓ بازاروں، ہسپتالوں اور يہاں تک کے جنازوں اور سکولوں جيسے عوامی مقامات پر زيادہ سے زيادہ بے گناہوں کو قتل کرنے کے ليے بم پھاڑيں گے اور پھر اپنی "عظيم کاميابی" کا ڈھنڈورا پيٹ کر مستقبل ميں بھی ايسے ہی انسانيت سوز جرائم کا سلسلہ جاری رکھنے کا عنديہ ديں گے تو آپ حکام بالا اور منتخب حکومت سے کيا توقعات رکھيں گے جو عوامی حفاظت کو يقينی بنانے کی ذمہ دار اور ہر شہری کو تحفظ فراہم کرنے کی ضامن ہوتی ہے؟

کيا آپ واقعی يہ سمجھتے ہيں کا دہشت گردی کا شکار ہونے والے افراد کے عزيز واقارب کو "نظرانداز اور معاف کرو" کے فلسفے پر يہ بنياد بنا کر قائل کيا جا سکتا ہے کہ دہشت گردی کی روک تھام کے لیے کوئ بھی کاروائ خطے کے مجموعی امن کے لیے خطرہ بن جاۓ گی؟ کيا آپ واقعی يہ سمجھتے ہيں کہ جو افراد ان قبيح جرائم کے ذمہ دار ہيں، ان کے خلاف کوئ کاروائ نا کر کے اور ان کے مطالبات کے سامنے سر تسليم خم کر لینے سے دہشت گردی منظر سے غائب ہو جاۓ گی اور تشدد ميں کمی واقع ہو جاۓ گی؟

جب کچھ تجزيہ نگار 911 کے بعد امريکہ کی دہشت گردی کے خلاف جنگ کو غير منطقی اور انتہائ جذباتی ردعمل قرار ديتے ہيں تو وہ ان حقائق اور خطرات کو نظرانداز کر ديتے ہيں جن کا سامنا امريکی حکومت کو اس حادثے کے فوری بعد کرنا تھا۔

اس وقت حقائق کچھ يوں تھے۔

القائدہ کی جانب سے امريکہ کے خلاف باقاعدہ جنگ کے اعلان کے بعد قريب 10 سال کے عرصے ميں دنيا بھر ميں امريکی املاک پر حملے کرنے کے بعد يہ تنظيم اتنی فعال اور منظم ہو چکی تھی کہ امريکہ کے اہم شہروں سميت اس کے عسکری مرکز پينٹاگان پر براہراست حملہ کيا گيا۔

اس واقعے کے بعد امريکہ سميت دنيا کے کئ ممالک ميں القائدہ کی جانب سے مزيد ايسی ہی کاروائياں کرنے کی يقين دہانی بھی ريکارڈ پر موجود ہے۔

حکومت پاکستان کے ذريعے امريکہ نے طالبان کے ساتھ 2 ماہ تک مذاکرات کيے جن کا مقصد اسامہ بن لادن کی گرفتاری اور افغانستان ميں اس تنظيم کو تحفظ فراہم نہ کرانے کی يقين دہانی حاصل کرنا تھا۔ ليکن طالبان نے ان مطالبات کو ماننے سے صاف انکار کر ديا۔

ان حالات ميں امريکہ کے سامنے کيا متبادل راستہ باقی رہ گيا تھا؟

آپ يقينی طور پر امريکی حکومت سے يہ توقع نہيں رکھ سکتے کہ وہ ملکی سلامتی کے اہم ترين فوجی فيصلے انھی دہشت گردوں سے امن مذاکرات کے ذريعے کرے جو اپنے اقدامات سے اور عملی کاروائيوں سے اپنے ارادے ظاہر کر چکے ہيں۔

جب آپ امريکہ کی فوجی کاروائيوں کے بارے ميں راۓ کا اظہار کرتے ہیں تو يہ حقیقت بھی سامنے رکھنی چاہيے کہ اگر 911 کے واقعے کے بعد بھی القائدہ کے خلاف کاروائ نہ کی جاتی تو اس کے کيا نتائج نکلتے۔ اگر القائدہ کی دو تہائ سے زائد ہلاک اور گرفتار ہونے والی قيادت آج بھی سرگرم عمل ہوتی تو اس تنظيم کی کاروائيوں ميں مزيد اضافہ ہوتا اور القائدہ کا يہ پيغام دہشت گردی کی صفوں ميں شامل ہونے والے نوجوانوں کے ليے مزيد حوصلہ افزائ اور تقويت کا سبب بنتا کہ دنيا کی سب سے بڑی فوجی طاقت رکھنے والے ملک اور اس کی حکومت کو بھی دہشت گردی کے ذريعے سياسی دباؤ ميں لا کر اپنے مطالبات اور مطلوبہ مقاصد حاصل کيے جا سکتے ہیں۔

آپ يہ دعوی کرتے ہيں کہ 911 کے واقعات کے بعد امريکی کاروائ کے نتيجے ميں خطے ميں پرتشدد کاروائيوں ميں اضافہ ہوا ليکن حقيقت يہ ہے کہ آپ کے سوال کا جواب تو آپ کی دليل ميں ہی موجود ہے۔ القائدہ اور اس سے منسلک عناصر نے ہی دہشت گردی کی اور اس سانحے کے روز ہزاروں بے گناہ افراد کو قتل کر کے تشدد کی لہر کا نا صرف يہ کہ اس عمل کا آغاز کيا بلکہ پھر مستقبل ميں بھی ايسی ہی کاروائياں جاری رکھنے کا برملا اظہار کيا تھا۔ ذمہ داری کا بار انھی پرتشدد دہشت گردوں کے سر ہے جو بے گناہ انسانوں کو قتل کيے جا رہے ہيں نا کہ وہ جو بے گناہ اور معصوموں کو قتل کرنے کی اس خونی مہم کو روکنے کے ليے کوشاں ہيں۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

http://www.facebook.com/USDOTUrdu


#1297

You are obviously stupid, the purpose of the question was to just highlight that after 9-11 and US attacks
on afghanistan and Iraq(So called WMDs, which your masters never found) has increased the terror attacks
through out the world where as before it there was a far lesser number of terror attacks. So USofA has

created a bigger problem to profit from it via the weapons industry. Terror attacks increase the demand of

weapons even among the third world countries and US provides them, instead of finding a solution to it.

Just like when your masters got spanked hard in the ass and ran away from veitnam and there was no place

to go, you call that a victory. USA has a motto when you can not get out of a war get into another one.

Your masters created Taliban and Al-qaeda and then attacked them, Your masters brought Saddam Hussain

into power then killed him, Your masters brought houssni mubarak and Qaddafi and then makes enemies of them.

And then finally the ISIS, Daesh, ISIL, IS whatever......

ONce your government creates Daeesh and then attacks them, wow that is really intelligent.

plz kill your self.

P.s. you being muslim, jewish, christian, hindu, or alien doesn't matter to me, its your life, God is going to judge you, not me. So keep that to your self.


#1298

In USA america there are lot of mess in lots of states not cities but the whole states which are no go area . peace and justice are not expected there and police or even county sheriff are even afraid of conducting any raid in critical zones of these areas. also nigro and whites people fights we heard about . so what can you expect from USA. its we who are not diverted toward positive things, we should not blame america or pakistan but we should always raise for rightful acts and stop the sin from ourselves and then in the society around ourselves. because its not about justice in pakistan or in USA. its about understanding the basic purpose of life first. Allah is most powerfull in the whole world and May Allah forgive us all and guide us in to the right direction. ameen


#1299

[quote=", post:, topic:"]

يہ درست ہے کہ 911 کے واقعات ميں براہراست ملوث افراد افغان شہری نہيں تھے۔ ليکن يہ بھی ايک ناقابل ترديد حقيقت ہے کہ جن افراد نے دہشت گردی کے اس واقعے ميں حصہ ليا تھا ان کی تربيت افغانستان ميں موجود القائدہ کے ٹرينيگ کيمپس ميں کی گئ تھی۔ افغانستان کے خلاف فوجی کاروائ کا فيصلہ اسی وقت کيا گيا
[/quote]

People who planned the 9/11 attacks, used computers to plan it. probably windows or macs.. as they have the most software.. they were trained to use the computers and practiced on computer simulations how to hijack airplanes.. many terrorists were trained and out of them, those who were the best with the computers would have been selected to do the mission as this is probably what makes sense, right?

so a simple question is,.

why did not, the USA, bomb Microsoft office or Silicon valley Apple office who make those computers? why was Bill gates or steve jobs not hanged publicaly for training people how to use PCs? why no Military raid on Steve Wozniak`s home for confiscating the User manual of operating iOS.?

[quote=", post:, topic:"]PS: i still support fawad for his professional journalism and sound logical replies[/quote]

#1300

[quote=“Ahmsun, post:1297, topic:8084”]

So USofA has

created a bigger problem to profit from it via the weapons industry. Terror attacks increase the demand of

weapons even among the third world countries and US provides them, instead of finding a solution to it.

[/quote]

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

سب سے پہلے تو ميں يہ واضح کر دوں کہ امريکی معيشت ترقی کے ليے دفاع کی صنعت پر انحصار نہيں کرتی۔ يہ بھی ياد رہے کہ صرف اسلحہ سازی ہی وہ واحد صنعت نہيں ہے جس ميں امريکہ عالمی رينکنگ ميں سب سے اوپر ہے۔ چاہے وہ تعليم ،زرعات، آئ – ٹی ،جہاز سازی يا تفريح کی صنعت ہو، امريکی معيشت کسی ايک صنعت پر مخصوص نہيں ہے۔

يہ بھی ايک حقیقت ہے کہ امريکہ جنگ يا تشدد سے متاثرہ علاقوں کو معاشی اور سازوسامان پر مبنی امداد مہيا کرنے والوں ممالک ميں سر فہرست ہے۔

اس بات کی کيا منطق ہے کہ امريکہ دانستہ فوجی کاروائيوں اور جنگوں کی ترغيب اورحمايت کرے اور پھر متاثرہ علاقوں کی مدد کے ليے اپنے بيش بہا معاشی اور انسانی وسائل بھی فراہم کرے؟

اعداد وشمار اور عملی حقائق اس تھيوری کو غلط ثابت کرتے ہيں۔

فواد – ڈيجيٹل آؤٹ ريچ ٹيم – يو ايس اسٹيٹ ڈيپارٹمينٹ

digitaloutreach@state.gov

www.state.gov

http://www.facebook.com/USDOTUrdu